شاہ خراسان



بسم ہللا الرحمن الرحیم
پولیس کی دھشت گردی
 
اگر فردوس بر روی زمین است 
ھمین این است وھیمن است وھمین است
 
الحمد لله رب الشھداء و الصالحین و السلام علی النبی ۖ رحمۃ للعالمین و علی آلہ الطیبین الطاھرین ، 
اما بعد ۔
عیسوی سال کا بدلتا وقت ہے ، نیم شب میں بالکل مولانا ابوالکلام آزاد کی سحر خیزی یاد آرھی 
ہے ، مولانا آزاد نے نا موافق حالات ، اور انگریزوں کی بربریت کے خلاف آواز اٹھانے کا ایک 
بہترین طریقہ تحریر و اخبار کو لیا تھا تو اسی کی پیروی کرتے ہوۓ میں بھی اپنا درد دل تحریر 
میں پیش کر رھا ہوں ۔
تقریر و اقدام و عمل کے راستے بند ہیں تو کچھ نہ سہی علامہ اقبال کی طرح اپنی قوم کو بیدار 
کرنے شکوہ ھی کر سکتاہوں ۔ 
مھاتما گاندھی اور بے شمار مجاھدین آزادی کی ظلم کے خلاف اٹھنے کی بہترین معیاری زندگیاں 
ھمارے سامنے موجود ہیں ۔ 
ّ بھارت کا واسی ہونے کے لحاظ سے آج کی موجود دھشت زدہ اور نفرت بھرے 
ماحول میں کٹر
ھندو حکومت کے خلاف اٹھنا ھم سب کا فریضہ ہے ، جو کہ در اصل دھشت گرد ، انسانیت دشمن 
، آر ایس ایس جیسی احمق پارٹیوں کی آلہ کار اور در حقیقت اسلام دشمن یہودیوں کے بناۓ ہوۓ 
نقشوں پر چل رھی ہے ۔ 
ایسے سنگین حالات میں کہ جہاں ایک طرف ھمارے مذھبی راھنما بی جے پی کے ھاتھوں بک 
چکیں ہے اور ان کی حکومت کے صحیح ہونے کا ثبوت لوگوں کو دیتے پھر رھے ہیں ،اور 
سواۓ اسدالدین اویسی جیسوں کے کوئی بھی قابل اعتماد نہیں ہے ۔
تو دوسری طرف پولیس ھی دھشت گردی پر اتر آئی ہے ، اور نھتّوں پر ظالمیانہ وار کرھی ہے ،
معصوم بچوں کو گھراو کر کے مار رھی ہے ۔ 
ایسے حالت مین ھمین اپنی بے شعوری اوربزدلی کو دل سے نکال پھیکنی چاہیۓ اور میدان میں 
اترنا چاہیۓ ، ڈرپوک کاھل لوگوں کیلۓ یہ ناسازگار حالات ہیں لیکن اھل عمل کیلۓ یہ موقع
غنیمت ہے ؛ ایک ی جد و جھد کیلۓ ، بیداری اسلامی کیلۓ ، عزت کی زندگی جینے کیلۓ ، 
ھمارے آنے والی نسل کو ایک پاک ماحول فراھم کرنے کیلۓ ۔ 
مسلمان اس وقت جب پورے ھندوستان پر حکومت کرتے تھے ھمارے تعداد اتنی بھی نہیں تھی 
جتنی آج ہے ، بھارت میں سب سے زیادہ مسلمان پاۓ جاتے ہیں ، اور مسلمان دنیا کے بھی ے 
ے میں پاۓ جاتے ہیں اور ھندوستان میں بھی کم از کم ایک پنجم ہیں ۔ قرآن نے ایک صبر 
کرنے والے مسلمان کو بیس کفار اور صبر نہ کرنے والے مسلمان کو دس کفار کے برابر جانا ہے 
۔ 
جس بھارت میں ھم ھزار سال سے زیادہ آبرومندانہ حکومت کر چکے ہیں ، اور پوری دنیا میں 
ھمارے جیسا دورہ اسلامی کہیں نہیں گذرا ہے ۔ مسلمانوں نے جتنی تعمرات سرزمین ھند میں کیہے کہیں نہیں کی ۔ ھمارے یہاں سے زیادہ بڑے قلعہ کہیں نہیں پاۓ جاتے ، آج اسی زمین میں 
ھمارے اھل وطن ہونے کا ثّبوت مانگا جا رھا ہے ۔
ایک طرف پڑھا لکھا طبقہ کمزور اور بد بخت حالت مین پھینک دیا گیا ہے تو دوسری طرف بے 
وقوف شّر پسند طبقہ عام مسلمانوں کی جان لینے پہ تلا ہوا ہے ۔
مشکل یہ ہے کہ ھمارے آدھے سے زیادہ مسلمان بھائی 70 سال پہلے ھی ھمارے سے الگ کر 
دیۓ گئے ، اور وہ بیچارے ھمارے ، ھمارے ملک کی خوشحالی ، اور کامیاب زندگی کے پکے
دشمن بنے بیٹھے ہیں ۔ بظاھر نام دھوکا دینے کیلۓ پاکستان رکھ لیا گیا ہے لیکن در حقیقت 
انگریزوں کا نجس وجود اور کافروں کی پھونکی ہوئی روح ان کے اندر ہے ۔ 
اب جبکہ اندرونی کٹر دشمن ھندو راشٹریہ والے[ اور بیرونی ھمارے وجود کے کٹر دشمن
پاکستان و عرب و امارات۔۔۔[ ھمارے وجود کو نابود کرنے بیٹھیں ہیں اور عالم اسلام بھی ھم غریب 
مسلمانوں کے حق میں آواز اٹھانا ننگ محسوس کرتاہے تو ھمیں خود ھی کوئی راہ چارہ نکالنا 
چاہیۓ ۔ 
} راہ چارہ { 
پہلے تو یہ دھیان میں رھے کہ جو ی پارٹیاں جیسے گٹھ بندھن ، عام آدمی پارٹی ، مجلس 
اتحاد مسلمین ۔۔۔ کے نقصان میں نہ ہو ،اور کسی بھی عام آدمی کو چاہے وہ ھندو رھے یا مسلمان 
نقصان نہیں پہونچنا چاہیۓ ۔ لیکن انسانیت کی بقا کیلۓ ، انصاف کیلۓ ، اسلام کیلۓ ،بہتر کل کیلۓ . 
ّ موجود بی جے پی پارٹی
. کٹر هندو– آر ایس ایس جیسی تنظیموں – سنگھ 
پریوار – شیو سنہ ۔۔۔ وغیرہ پر ھم عام بھارت واسیوں کو مل کر سونچی سمجھی چال چل کر ان پر 
ڈنڈا کسنا چاہیۓ ۔ 
وه حال جو جنک جہان دوم کے وقت ھٹلر نے جاپان وغیر کا کیا تھا وھی ھندوستان کا بھی 
ہوگا ، اور جس طرح سے فلسطینیوں کی زندگیوں کو لب مرگ پر لا کے رکھ دیا گیا ہے وھی 
حال کشمیر کا ہوگا ۔ 
خطہ کے رھنے والے مسلمان اگر تھوڑی شمر کریں تو ھمارے تعداد کم نہیں ہے اس ذلت کی 
زندگی کی بجاۓ ایک اچھی عزت کی زندگی جی سکتے ہیں ۔ 
اگر کوئی ظلم کیلۓ ھاتھ نہیں اٹھاتاہے تو ھزار شکر خدا لیکن اگر کمزور دیکھ کر ھم پر زیادتی 
کرنا چاہتا ہے اور ھم ایک پاک و صاف زندگی جینا چاہتے ہیں اس لۓ ھمارا وجود انھیں ناگوار 
گذر رھاہے تو پھر انصاف ۔ اسلام اور انسانیت کےناطے ھمیں ظلم کے خلاف اٹھنا چاہیۓ ۔ 
کیونکہ دفاع بیماروں ، بچوں ۔ حتی عورتوں سے بھی ساقط نہیں ہوتا ۔
قرآن کہتاہے ] من اعتدا علیکم فاعتدوا علیہ۔۔[ جو تم پر زیادتی کر جاۓ اس پر تم بھی زیادتی کر 
جاوں ۔ 
اگر وہ شرافت کا صلہ اینٹ سے دیا جاۓ گا سمجھتے ہیں تو اینٹ کا جواب پتھر سے دیا جاۓ گا 
۔ 
ھم برائی نہ کرنے کی غرض سے ظالموں کے قدموں میں سر رکھ دیں گے تو عزت تو جاۓ گی 
ھی جاۓ گی سر بھی جاۓ گا ، تو جو لوگ ھم پر ایکشن لینا چاہتے ہیں ھمین ان پر ری اکشن لیناچاہیۓ ، جو ظلما ایک جھاپڑ مارنے کیلۓ آیا ہے اسے دو جھاپڑ مارکے بھجا دینا چاہیۓ ، تبھی 
ظلم سے بچ سکتے ہیں کیونکہ یہ لوگ بات سمجھنے کی حالت کو اپنے ھاتھ سے دے چکے ہیں 
اور مار کو یہ کیا ان کا باپ بھی اچھی طرح سمجھے گا ۔
جب آۓ دن ھم بے گناہ مسلمان مارے جانے کی حالت دیکھ رھیں ہیں تو دنیا کی کسی قوم سے 
امید کیۓ بغیر ھمیں خود هی کھڑا ہونا ہو گا ۔ کیونکہ چاہے اسلامی ملک ہوں یا غیر اسالمی 
ھندوستان کے مسلمانوں کیلے کوئی بھی کھڑا نہیں ہوگا ۔ کیونکہ دنیا جانتی ہے کہ ھمارے کھڑے 
ہونے کا مطلب کیا ہے ۔ 
جب پولیس کے روپ میں آر ایس ایس کے گھنڈے گھوم رہے ہیں تو ھمیں بھی چونکا رھنا چاہیۓ 
، اور ھمیں بھی اپنے بچاو کیلۓ الگ الگ قسم کے گروہ بنانے ہوں گے اور جہاں کہیں پولیس 
نهتے لوگوں کو مارنے ھمارے علاقوں میں پھسے تو خود پولیس کو گھراو میں دال کے مارنا 
چاہیۓ ، والا ایسےھی یہ عام لوگوں پر ظلم ختم نہیں ہو گا ۔ 
ھمارے چودہ سو سال کی تاریخ گواہ ہے جب بھی ظلم کے خلاف اٹھیں ہیں تو نابود کرکے 
چھوڑے ہیں ۔ 
و السلام علیکم و رحمۃ لله
شب اول سال عیسوی ۔ 2020

ابنا ۔ کی رپورٹ کے مطابق حزب اللہ کے سیکریٹری جنرل سید حسن نصراللہ نے المیادین ٹیلی ویژن چینل سے گفتگو کرتے ہوئے شام میں اسلامی مزاحمت و استقامت کی شاندار کامیابی کی جانب اشارہ کرتے ہو‏ئے کہا ہے کہ اسرائیل کو شام میں بہت بری طرح شکست ہوئی ہے۔

لبنان کی عوامی اور انقلابی تحریک حزب اللہ کے سیکریٹری جنرل سید حسن نصر اللہ نے کہا کہ شام اس وقت آٹھ سالہ بحران کے بعد بہترین صورتحال میں ہے۔

سید حسن نصر اللہ نے کہا کہ سرحد پر اسرائیلی فوج کے اقدامات سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ اسرائیلی فوج پر خوف و ہراس طاری ہے۔

حزب اللہ کے سربراہ نے لبنان کی سرحدوں پر اسرائیل کی فوجی نقل و حرکت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل کی طرف سے مسلط کردہ جنگ کی صورت میں ہم مناسب اور منہ توڑ جواب دیں گے اور لبنانی سرزمین کا دفاع کرنے کے لئے تمام لبنانی آمادہ اور تیار ہیں۔

انھوں نے کہا کہ حزب اللہ کے پاس ٹارگیٹ کرنے والے میزائل بڑی تعداد میں موجود ہیں جو مستقبل میں کسی بھی طرح کی جنگ میں استعمال کئے جائیں گے۔


ہندوستانی وزیراعظم 3روزہ دورے پر اسرائیل پہنچ گئے

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی ۔ ابنا ۔ کی رپورٹ کے مطابق ہندوستانی وزیراعظم نریندر مودی 3روزہ دورے پر اسرائیل پہنچ گئے ہیں جہاں اسرائیل کے وزیر اعظم نیتن یاہو نےتل ابیب کے بن گورین ایئرپورٹ پران کا استقبال کیا ۔ اس موقع پر انہیں گارڈ آف آنر پیش کیا گیا ۔ نریندر مودی اسرائیل کا دورہ کرنے والے پہلے ہندوستانی وزیراعظم ہیں، نریندر مودی کا کہناتھاکہ اسرائیل کے ساتھ دہشت گردی کے خلاف تعاون سمیت ہر شعبے میں تعاون بڑھائیں گے۔ اس دورے میں میزائل، ڈرون اور ریڈار سسٹم سمیت ہتھیاروں کی فروخت کے اربوں ڈالر کے سمجھوتوں کا امکان ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔

/169


۔


ہل بیت(ع) نیوز ایجنسی ۔ ابنا ۔ کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت انٹیلیجنس نے ایک بیان میں کل پارلیمنٹ پرحملے میں ملوث دہشت گردوں کے بارے میں اطلاعات فراہم کرتے ہوئےکہا ہے کہ کل تہران میں پارلیمنٹ اور حضرت امام خمینی(رہ) کے حرم مبارک پر حملے میں ملوث وہابی دہشت گرد تنظیم داعش کے عناصر کو پہچان لیا گیا ہے جو شام کے علاقہ رقہ اور عراق کے شہر موصل میں بھی دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث رہے ہیں۔ 
وزارت اطلاعات کے بیان کے مطابق ایرانی عوام کو آگاہ کیا جاتا ہے کہ امام زمانہ (عج) کے گمنام سپاہیوں نے کل پارلیمنٹ پر حملےمیں ملوث وہابی دہشت گردوں اور ان کے سہولتکاروں کو پہچان لیا اور دہشت گردوں کے سہولتکاروں کو گرفتار کرلیا ہے۔ وزارت انٹیلیجنس کے مطابق حملےمیں ملوث 5 دہشت گرد پہلے بھی دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث رہے ہیں دہشت گردوں کا تعلق وہابی دہشت گرد تنظیم داعش سے ہے وہابی دہشت گرد رقہ اور موصل میں بھی دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث رہے ہیں ۔
دہشت گردوں کے سرغنہ ابو عائشہ کو جب ہلاک کیا گیا تو یہ دہشت گرد ایران سے فرار ہوگئے تھے۔ دہشت گردوں کے فیملی ناموں کو سکیورٹی وجوہات کی بنا پر ظاہر نہیں کیا جاسکتا جب کہ ان کے اصلی نام پیش کئے جاتے ہیں۔ مارے گئے 5 دہشت گردوں کے نام رامین، سریاس، فریدون ، قیوم اور ابوجہاد ہی
ں


 

 کے مطابق افغانستان کے سابق صدر حامد کرزائی نے ترک خبررساں ایجنسی آناتولی کے ساتھ گفتگو میں وہابی دہشت گرد تنظیم داعش کو امریکی محصول قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان میں قیام امن کے لئے غیر ملکی افواج کا انخلا بہت ضروری ہے امریکہ خطے میں داعش کے بہانے دہشت گردی کو فروغ دے رہا ہے۔ سابق صدر حامد کرزائی نے کہا کہ افغانستان میں داعش کا فروغ امریکی پروجیکٹ کا حصہ ہے امریکہ افغانستان سے دہشت گردی کے خاتمہ کے حق میں نہیں ہے۔ اگر ایسا ہوتا تو افغانستان میں امریکی فوج کی موجودگی میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں کمی آنا چاہیے تھی جبکہ دہشت گردانہ کارروائیوں میں ہر روز اضافہ ہورہا ہے ۔ انھوں نے کہا کہ افغانستان میں قیام امن کے لئے غیر ملکی افواج کا افغانستان سے انخلا ضروری ہے۔ کرزائی نے کہا کہ روس بھی ممکن ہے امریکہ اور برطانیہ کی طرح طالبان سے رابطہ میں ہو ۔ اس نے کہا کہ داعش کی افغانستان میں پرورش کا مقصد خود افغانستان نہیں بلکہ ہمسایہ ممالک ہیں میں داعش کے ذریعہ عدم استحکام پیدا کرنا ہے۔

۔۔۔۔۔۔
۔



اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی ۔ ابنا ۔ کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے مشرقی علاقے سے موصولہ خبروں میں کہا گیا ہے کہ سعودی فوجی اور سیکورٹی اہلکار بدستور العوامیہ کے باشندوں کے رہائشی مکانات، اسکولوں اور مساجد کو نذر آتش کررہے ہیں - نبا نیوز چینل نے بھی خبردی ہے کہ ایک ایسے وقت جب العوامیہ کے باشندے گذشتہ بیس روز سے سعودی فوجیوں اور سیکورٹی اہلکاروں کے محاصرے میں ہیں منگل کو ایک بار پھر سعودی فوجیوں اور سیکورٹی اہلکاروں نے دوشہریوں کے گھروں کو آگ لگا کرانہیں مسمار کردیا - جن شہریوں کے گھروں کو سعودی کارندوں نے مسمار کیا ہے ان میں سے ایک عبداللہ الواہر کا گھر بھی ہے جنھیں سعودی عدالت نے موت کی سزا سنا رکھی ہے - سعودی فوجیوں نے منگل کو یہ کارروائیاں العوامیہ کے محلوں المرواح ، الریف اور دیرہ میں انجام دیں - سعودی فوجیوں نے دیرہ محلے میں گولہ باری بھی کی ہے-

۔۔۔۔
۔



     

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ امریکہ نے پاکستان کے خلاف ایک اوراقدام میں پاکستانیوں کے لئے ویزوں کے اجراءمیں40 فیصد کمی کردی ہے۔

امریکہ نے پاکستانیوں کے لئے ویزوں کے اجراءمیں 40فیصد کمی کردی ہے ،جبکہ بھارتیوں کے لئے 28 فیصد بڑھادی ہے۔

برطانوی اخبار کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کی جانب سے غیر ملکیوں سے متعلق جاری ہونے والے اگزیکٹیو آرڈر جاری ہونے کے بعد پاکستانی شہریوں کے لئے جاری کئے جانے والے نان امیگرنٹس ویزوں کی تعداد میں نمایاں کمی نظر آئی ہے۔

گزشتہ اپریل میں 3ہزار 925 اور مارچ میں 3ہزار 973 ویزے جاری کئے گئے ہیں، جو سابق صدر باراک اوباما کے دور میں جاری ہونے والے ویزوں کے تناسب سے 40فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔

گزشتہ سال 2016 میں پاکستانیوں کے لئے مجموعی طور پر 78ہزار637 ویزے جاری ہوئے تھے جو ماہانہ تناسب کے لحاظ سے ہر ماہ 6ہزار553 ویزے جاری کئے گئے تھے۔

واضح رہے کہ پاکستان کی ی اورمذہبی جماعتوں اوراس ملک کے عوام کا کہنا ہے کہ امریکہ دوستی کے لبادے میں پاکستان کو مسائل و مشکلات سے دوچارکررہا ہے کبھی اس ملک پر ڈرون حملے کئے جاتے ہیں تو کبھی دہشتگردی کے خلاف جنگ میں اس کی امداد روک دی جاتی ہے، کبھی امداد کم  کردی جاتی ہے اور کبھی پاکستان سے ڈومور کا مطالبہ کیا جاتاہے لیکن اس کے باوجود پاکستانی حکام امریکہ کو پاکستان کا اتحادی اوردوست سمجھتے ہیں۔


۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ العالم کی رپورٹ کے مطابق عراق کے دارالحکومت بغداد کے الکراده علاقے میں ہونے والے ایک کار بم دھماکے میں 11 افراد جاں بحق اور 30 کے قریب زخمی ہو گئے۔ زخمیوں کو ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں بعض کی حالت نازک بتائی جاتی ہے۔

موصل میں دہشتگردوں کو ملنے والی یکے بعد دیگرے شکستوں کے بعد تکفیری دہشتگرد گروہ داعش، عراق کے مظلوم اور نہتے عوام کے خلاف اس قسم کے بزدلانہ حملے کررہا ہے۔


 

  • News Code : 832035
  • Source : ابنا خصوصی
Brief

آپ بہت اچھے سے جانتے ہیں کہ روزہ داری کا ایک فلسفہ بھوکوں کو یاد کرنا اور بے کسوں اور محتاجوں کی مدد کرنا ہے۔ پیغمبر اکرم (ص) نے فرمایا: تم میں سے جو کوئی اس مہینہ میں کسی مومن روزہ دار کو افطار کرائے، خداوند عالم کے نزدیک اسے ایک غلام کو آزاد کرانے کا ثواب ملے گا اور اس کے پچھلے تمام گناہ معاف کر دئے جائیں گے۔

اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ ماہ مبارک رمضان کی آمد کے موقع پر اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی نے یمن کے یتیموں اور بے کسوں کی دستگیری کے لیے دنیا کے مسلمانوں اور روزہ دار مومنوں سے اپیل کی ہے کہ یمن میں آل سعود کے جرائم کا شکار فقیر اور محتاج روزہ داروں کی مدد کے لیے آگے بڑھیں۔


تبلیغات

محل تبلیغات شما
خرید سکه ساکر استارز محل تبلیغات شما محل تبلیغات شما

آخرین وبلاگ ها

آخرین جستجو ها

Teri فرش ایرانی فانوس خیال هشتم سه نوشاد Chris ثبت شرکت هارمونی طبیعت سرفیس استوک Amber دست نوشته های من